سوموار, دسمبر 10, 2012

"ہماری زندگی ہمارا دین"

ہماری زندگی دراصل ہماری درسگاہ کی کہانی  ہے۔زندگی کے تعلیمی ادارے میں داخلہ تو آرام سے مل جاتا ہے لیکن ساتھ ہی
پراسپیکٹس بھی ملتا ہےجس میں قواعد وضوابط بتائے جاتے ہیں اُن کوسمجھ جائیں پھر نصاب پر آتے ہیں ۔ 
 قواعد و ضوابط  ارکانِ اسلام ہیں اورنصاب ہمارا قُرآن پاک ہے اور پراسپیکٹس ہمارا دین ہے۔
ہر ارکانِ اسلام کسی بھی عام درس گاہ کے اصولوں پر منطبق ہوتا ہے جیسےکہ
توحید و رسالت : یہ ہمارا انٹری ٹیسٹ ہے ۔
نماز: وقت کی پابندی سے مشروط ہے۔
روزہ : دوران ِ کلاس کھانے پینے کی ممانعت ہے۔
حجّ : لباس کی پابندی ہے۔
زکٰوۃ : اپنی استطاعت کے مطابق درس گاہ کا انتخاب ہے اور اپنے وسائل میں رہ کر فیس کی ادائیگی ہے۔
نصاب خود بھی پڑھا جا سکتا ہےکہ کتاب تواپنے پاس ہے جب چاہوکھول کر دیکھ لو۔لیکن اچھے نمبر لینے اوراعلیٰ درجے میں پاس ہونے کے لیے ایک ماہراُستاد بہت ضروری ہے ۔
2012، 4  نومبر





کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

"معلوماتِ قران"

٭لفظ قرآن، قرآن مجید میں بطور معرفہ پچاس(50) بار اور بطور نکرہ اسی(80) بار آیا ہے ۔یعنی پچاس بار قرآن کا مطلب کلام مجید ہے اور اسی بار ویس...