صفحہِ اول

جمعہ, فروری 15, 2013

"ماضی حال "

کھونے سے کل بھی ڈر لگتا تھا
بچھڑنے سے آج بھی ڈر لگتا ہے
گرنے سے کل بھی ڈر لگتا تھا
 ٹوٹنے سے آج بھی ڈر لگتا ہے
  اندر کا بچہ کبھی بڑا نہیں ہوتا
سر اُٹھانے سے سایہ جدا نہیں ہوتا

کوئی تبصرے نہیں :

ایک تبصرہ شائع کریں